حکومت گلگت بلتستان نے چارٹرڈ آف ڈیمانڈ پر عملدرآمد نہ کیا تو ملکی سطح پر آواز بلند کی جائے گی، علامہ شیخ نیئر عباس مصطفوی

20 آذار/مارس 2012

Nair Mustafviمجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے سیکرٹری جنرل علامہ شیخ نیئر عباس مصطفوی نے کہا ہے کہ1988کی لشکر کشی سمیت خونریزی کے دیگر سابقہ واقعات کو نظر انداز ہونے کی وجہ سے 28 فروری کو دلخراش واقعہ رونما ہوا ، اس واقعے میں وہی طالبانی عوامل کارفرما ہیں، جس کے نتیجے میں 1988 کی لشکر کشی ہوئی اور قائد ملت آغا ضیاالدین کو شہید کیا گیا، اس لیے ضروری ہے سانحہ کوہستان کے اصل محرکات کو عوام کے سامنے لایا جائے ۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار گلگت میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا

انہوں نے کہا کہ سانحہ کوہستان سے چند دن قبل وزارت داخلہ کی طرف سے سیکریٹری داخلہ کے نام ا لکھے گئے ایک خط میں نشاندہی کی گئی تھی کہ داریل تانگیر کے چند مولوی اینٹی شیعہ موومنٹ چلاتے ہوئے لوگوں سے پیسے جمع کر رہے ہیں جو کسی ناخوشگوار واقعہ کا پیش خیمہ ثابت ہو سکتا ہے لیکن اسے نظر انداز کر دیا گیااب وفاقی وزیر داخلہ کے دو دفعہ گلگت آمد اور انجمن امامیہ کے عمائدین سے ملاقات کے دوران ملت جعفریہ کے چارٹرڈ آف ڈیمانڈ کی منظوری کے باوجود ابھی تک حکومت گلگت بلتستان نے عمل درآمد نہیں کیا جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت ایک بار پھر دہشتگردوں کے دبائو میں آچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر داخلہ کے احکامات کے باوجود نصاب تعلیم کا نوٹفکیشن جاری کرنے سے گریز کیا جا رہا ہے اور اسے انتہا پسندوں کے ذریعے سے غلط تشریحات، ٹاک شوز و جلسہ جلوسوں کے ذریعے سے متنازعہ بنانے کی بھونڈی سازش کی جا رہی ہے، ملت جعفریہ اسے کسی بھی صورت قبول نہیں کر ے گی۔انہوں نے واضح کیا کہ ملت جعفریہ نے کبھی اپنا الگ نصاب نہیں مانگا اور نہ ہی اپنا عقیدہ کسی پر مسلط کرنے کی بات کی ہے، ہم یہ چاہتے ہیں کہ ملت اسلامیہ کے 85 فیصد مشترکات پر مشتمل سب کے لئے قابل قبول نصاب تعلیم مرتب کیا جائے۔ شیخ نیئر عباس نے کہا کہ ایم ڈبلیو ایم کا پورے ملک میں ایک مضبوط سیٹ اپ موجود ہے، 25 مارچ کو کراچی کی سرزمین پر قرآن و اہلبیت ع کانفرنس ملکی سطح پر منعقد ہو رہی ہے، حکومت گلگت بلتستان نے ملت جعفریہ کے چارٹرڈ آف ڈیمانڈ پر عملدرآمد نہ کیا تو ملکی سطح پر مطالبات اٹھائے جائینگے۔

ترك تعليقك

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree