مسئلہ کشمیر پاکستانی حکام کی حقیقی توجہ کا طالب ہے،علامہ تصور جوادی

04 شباط/فبراير 2014

وحدت نیوز(مظفرآباد) بھارت ہٹ دھرمی چھوڑے، کشمیری عوام کو ان کا حق خود ارادیت دیتے ہوئے اپنی فوج مقبوضہ کشمیر سے نکالے، کشمیر عوام ظلم کی چکی میں پس رہے ہیں، دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے دعویدار بھارت نے ظلم کی المناک داستانیں رقم کی ہیں، لیکن انسانی حقوق کی علمبردار عالمی تنظیمیں اور اقوام متحدہ کی خاموشی حیران کن ہے، عالمی برادری مسئلہ کشمیر کے حل میں اپنا کردار ادا کرے، ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین آزاد جموں وکشمیر کے سیکرٹری جنرل علامہ سید تصور حسین نقوی الجوادی نے وحدت سیکرٹریٹ مظفرآباد میں مختلف وفود سے بات چیت میں کیا ۔



انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین آزاد جموں وکشمیر مظلوم کشمیر عوام کے حق کے لیئے جدوجہد میں ان کے شانہ بشانہ ہے، اور کشمیری عوام کی آواز میں آواز ملا کر ان کی آواز کو ہر فورم پر اٹھاتی رہے گی، کشمیر میں شہداء نے لازوال قربانیاں دیں اور وہ وقت دور نہیں کہ جب کشمیر عوام کو ان کی منزل ملے، شہداء کا خون رائیگاں نہیں جائے گا، تاریخ گواہ ہے کہ جن قوموں کی آواز کو طاقت کے زور پر دبانے کی کوشش کی گئی، ان کی آواز پہلے سے بڑھ کر بلند ہوئی، علامہ سید تصور حسین نقوی الجوادی نے کہا کہ بھارت جتنا ظلم مرضی کر لے، جتنی طاقت مرضی استعمال کر لے، مگر وہ وقت دور نہیں کہ جب اس کی طاقت اور زبردستی ایک طرف رہے گی اور کشمیر کشمیریوں کا ہو جائے گا، بھارت جتنے ہتھکنڈے استعمال کرے گا ، مظلوم و محکوم کشمیر عوام کی آواز اتنی ہی زیادہ بلند ہوگی، انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین یہ مطالبہ کرتی ہے کہ نواز حکومت مسئلہ کشمیر پر دوٹوک مؤقف اپناتے ہوئے مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اُجاگر کرنے میں اپنا کردار اد کرے ، حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کو اپنی ترجیحات میں رکھے، افسوس کا مقام ہے کہ الیکشن سے پہلے سب کا بعرہ کشمیر ہمارا ہے ہوتا ہے، مگر جب ایوان اقتدار پر قابض ہوتے ہیں تو یہ نعرے ماضی بن جاتے ہیں اورکوئی عملی قدم دکھائی نہیں دیتا، حکمرانوں کو کشمیر کی محکوم ماؤں ، بہنوں اور بیٹیوں کی آہوں اور سسکیوں کا کوئی خیال نہیں ہوتا، جب اپنوں کو احساس نہ ہو تو باہر ہم کیوں کر دنیا سے یہ امید رکھیں کہ وہ ہمارے مسئلے پر خاموش کیوں ہیں؟ انہوں نے کہا کہ 5فروری یوم یکجہتی کشمیر اس عہد کی تجدید کا دن ہے کہ جماعت و تنظیم سے بالا ہو کر وحدت کی لڑی میں خود کو پرو کر مسئلہ کشمیر کی جدوجہد میں اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، خود کو ظالم کے مقابلے میں میدان میں لانا ہو گا، ہر ظالم چاہے وہ کسی گروہ یا ملک کی شکل میں ہی کیوں نہ ہو اس کے خلاف آواز کو اس وقت تک بلند رکھنا چاہیے کہ جب تک ظالم اپنے انجام کو نہ پہنچ جائے۔ مذاکرات میں کشمیریوں کو بھی شامل کیا جائے، مسئلہ کشمیر کا حل سہ فریقی مذاکرات سے ہی ممکن ہے، مذاکرات کو اگر نتیجہ خیز ، بامقصد و بامعنی بنانا ہے تو کشمیر کو مذاکراتی عمل میں شامل کیا جائے۔

ترك تعليقك

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree